Ghazal ہے فصیلیں اٹھا رہا مجھ میں

Discussion in 'اردو شاعری' started by intelligent086, Dec 13, 2017.

  1. intelligent086 FK Lover FK Lover Member Of The Month

    Messages:
    22,410
    Likes Received:
    2,569
    Trophy Points:
    98
    ہے فصیلیں اٹھا رہا مجھ میں
    جانے یہ کون آ رہا مجھ میں

    جون مجھ کو جلا وطن کر کے
    وہ مرے بِن بھلا رہا مجھ میں

    مجھ سے اُس کو رہی تلاشِ امید
    سو بہت دن چھپا رہا مجھ میں

    تھا قیامت سکوت کا آشوب
    حشر سا اک بپا رہا مجھ میں

    پسِ پردہ کوئی نہ تھا پھر بھی
    ایک پردہ کھِنچا رہا مجھ میں

    مجھ میں آکے گرا تھا اک زخمی
    جانے کب تک پڑا رہا مجھ میں

    اتنا خالی تھا اندروں میرا
    کچھ دنوں تو خدا رہا مجھ میں
     

Share This Page