Others جھولی میں عقیدت کے گہر مانگ رہے ہیں

Discussion in 'اردو شاعری' started by intelligent086, Apr 6, 2019.

  1. intelligent086 FK Lover FK Lover Member Of The Month

    Messages:
    22,556
    Likes Received:
    2,639
    Trophy Points:
    98

    صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم
    جھولی میں عقیدت کے گہر مانگ رہے ہیں
    سائل ہیں عنایت کی نظر مانگ رہے ہیں

    بس ایک دعا شام و سحر مانگ رہے ہیں
    آقاﷺ سے مدینے کا سفر مانگ رہے ہیں

    جس شہرمیں دربار ہے سخیوں کے سخی کا
    منگتے بھی اُسی شہر میں گھر مانگ رہے ہیں

    ہم گلشنِ ہستی کے خزاں دیدہ شجر میں
    سرکارﷺ کی الفت کا ثمر مانگ رہے ہیں

    سرکارِ دوعالمﷺ سے جو مانگو وہ ملے گا
    ہم حُسنِ نظر، کیفِ نظر مانگ رہے ہیں

    داتا ہیں وہ کرتے ہیں بہر حال عنایت
    کب ہم کو سلیقہ ہے مگر مانگ رہے ہیں

    اُس دَر سے ندیمؔ آپ بھی لیں نور کی خیرات
    جس دَر سے ضیا شمس و قمر مانگ رہے ہیں
    -------
    خان اخترندیمؔ نقشبندی
    مجموعہ نعتﷺ ("ساقئی کوثر")
    صفحہ نمبر۔126
     

Share This Page